تم انتظار کے لمحے شمار مت کرنا

عاصم واسطی

تم انتظار کے لمحے شمار مت کرنا

عاصم واسطی

MORE BY عاصم واسطی

    تم انتظار کے لمحے شمار مت کرنا

    دیئے جلائے نہ رکھنا سنگار مت کرنا

    مری زبان کے موسم بدلتے رہتے ہیں

    میں آدمی ہوں مرا اعتبار مت کرنا

    کرن سے بھی ہے زیادہ ذرا مری رفتار

    نہیں ہے آنکھ سے ممکن شکار مت کرنا

    تمہیں خبر ہے کہ طاقت مرا وسیلہ ہے

    تم اپنے آپ کو بے اختیار مت کرنا

    تمہارے ساتھ مرے مختلف مراسم ہیں

    مری وفا پہ کبھی انحصار مت کرنا

    تمہیں بتاؤں یہ دنیا غرض کی دنیا ہے

    خلوص دل میں اگر ہے تو پیار مت کرنا

    ملیں گے راہ میں عاصمؔ کو ہم سفر کئی اور

    وہ آ رہا ہے مگر انتظار مت کرنا

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY