تم مری آنکھ کے تیور نہ بھلا پاؤ گے (ردیف .. ا)

وصی شاہ

تم مری آنکھ کے تیور نہ بھلا پاؤ گے (ردیف .. ا)

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    تم مری آنکھ کے تیور نہ بھلا پاؤ گے

    ان کہی بات کو سمجھوگے تو یاد آؤں گا

    ہم نے خوشیوں کی طرح دکھ بھی اکٹھے دیکھے

    صفحۂ زیست کو پلٹو گے تو یاد آؤں گا

    اس جدائی میں تم اندر سے بکھر جاؤ گے

    کسی معذور کو دیکھو گے تو یاد آؤں گا

    اسی انداز میں ہوتے تھے مخاطب مجھ سے

    خط کسی اور کو لکھو گے تو یاد آؤں گا

    میری خوشبو تمہیں کھولے گی گلابوں کی طرح

    تم اگر خود سے نہ بولو گے تو یاد آؤں گا

    آج تو محفل یاراں پہ ہو مغرور بہت

    جب کبھی ٹوٹ کے بکھرو گے تو یاد آؤں گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY