تم نے یہ کیا ستم کیا ضبط سے کام لے لیا

شکیل بدایونی

تم نے یہ کیا ستم کیا ضبط سے کام لے لیا

شکیل بدایونی

MORE BYشکیل بدایونی

    تم نے یہ کیا ستم کیا ضبط سے کام لے لیا

    ترک وفا کے بعد بھی میرا سلام لے لیا

    رند خراب نوش کی بے ادبی تو دیکھیے

    نیت مے کشی نہ کی ہاتھ میں جام لے لیا

    ہائے وہ پیکر ہوس ہائے وہ خوگر قفس

    بیچ کے جس نے آشیاں حلقۂ دام لے لیا

    بادہ کشان عشق کو کچھ تو ملا پئے سکوں

    حسن سحر نہ لے سکے جلوۂ شام لے لیا

    نامۂ شوق پڑھ کے وہ کھو گئے یک بیک شکیلؔ

    منہ سے تو کچھ نہ کہہ سکے دل سے پیام لے لیا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تم نے یہ کیا ستم کیا ضبط سے کام لے لیا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY