تمہاری یاد کے جب زخم بھرنے لگتے ہیں

فیض احمد فیض

تمہاری یاد کے جب زخم بھرنے لگتے ہیں

فیض احمد فیض

MORE BY فیض احمد فیض

    تمہاری یاد کے جب زخم بھرنے لگتے ہیں

    کسی بہانے تمہیں یاد کرنے لگتے ہیں

    حدیث یار کے عنواں نکھرنے لگتے ہیں

    تو ہر حریم میں گیسو سنورنے لگتے ہیں

    ہر اجنبی ہمیں محرم دکھائی دیتا ہے

    جو اب بھی تیری گلی سے گزرنے لگتے ہیں

    صبا سے کرتے ہیں غربت نصیب ذکر وطن

    تو چشم صبح میں آنسو ابھرنے لگتے ہیں

    وہ جب بھی کرتے ہیں اس نطق و لب کی بخیہ گری

    فضا میں اور بھی نغمے بکھرنے لگتے ہیں

    در قفس پہ اندھیرے کی مہر لگتی ہے

    تو فیضؔ دل میں ستارے اترنے لگتے ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    بھارتی وشوناتھن

    بھارتی وشوناتھن

    RECITATIONS

    فیض احمد فیض

    فیض احمد فیض

    فیض احمد فیض

    تمہاری یاد کے جب زخم بھرنے لگتے ہیں فیض احمد فیض

    مآخذ:

    • کتاب : Nuskha Hai Wafa (Pg. 133)

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY