طوفاں سے قریہ قریہ ایک ہوئے

اختر ہوشیارپوری

طوفاں سے قریہ قریہ ایک ہوئے

اختر ہوشیارپوری

MORE BY اختر ہوشیارپوری

    طوفاں سے قریہ قریہ ایک ہوئے

    پھر ریت سے چہرہ چہرہ ایک ہوئے

    چاند ابھرتے ہی اجلی کرنوں سے

    اوپر کا کمرہ کمرہ ایک ہوئے

    الماری میں تصویریں رکھتا ہوں

    اب بچپن اور بڑھاپا ایک ہوئے

    اس کی گلی کے موڑ سے گزرے کیا تھے

    سب راہی رستہ رستہ ایک ہوئے

    دیوار گری تو اندر سامنے تھا

    دروازہ اور دریچہ ایک ہوئے

    جب وہ پودوں کو پانی دیتا تھا

    پس منظر اور نظارہ ایک ہوئے

    کل آنکھ مچولی کے کھیل میں اخترؔ

    میں اور پیڑوں کا سایہ ایک ہوئے

    مآخذ:

    • کتاب : TASTEER (Pg. 425)
    • Author : Nasiir Ahmed Nasir
    • مطبع : C-56,LDA Flats, Chanaab Block, Iqbaal Town, Lahore (Issue No. 9,10 July/August. 1999)
    • اشاعت : Issue No. 9,10 July/August. 1999

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY