ٹوٹتے جسم کے مہتاب بکھر جا مجھ میں

مصور سبزواری

ٹوٹتے جسم کے مہتاب بکھر جا مجھ میں

مصور سبزواری

MORE BYمصور سبزواری

    ٹوٹتے جسم کے مہتاب بکھر جا مجھ میں

    میں چڑھی رات کا دریا ہوں اتر جا مجھ میں

    میں تری یاد کے ساون کو کہاں برساؤں

    اب کی رت میں کوئی بادل بھی نہ گرجا مجھ میں

    جانے میں کون سے پت جھڑ میں ہوا تھا برباد

    گرتے پتوں کی اک آواز ہے ہر جا مجھ میں

    کوئی مہکار ہے پھولوں کی نہ رنگوں کی لکیر

    ایک صحرا ہوں کہیں سے بھی گزر جا مجھ میں

    ختم ہونے دے مرے ساتھ ہی اپنا بھی وجود

    تو بھی اک نقش خرابے کا ہے مر جا مجھ میں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    ٹوٹتے جسم کے مہتاب بکھر جا مجھ میں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY