اس شوخ نے نگاہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

حفیظ جالندھری

اس شوخ نے نگاہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

حفیظ جالندھری

MORE BY حفیظ جالندھری

    اس شوخ نے نگاہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

    ہم نے بھی آہ آہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

    آیا نہ ان کو عہد ملاقات کا لحاظ

    ہم نے بھی کوئی چاہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

    دیکھا کئے ہماری طرف بزم غیر میں

    تجدید رسم و راہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

    تھا زندگی سے بڑھ کے ہمیں وضع کا خیال

    جب عمر نے نباہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

    خاموش ہو گئیں جو امنگیں شباب کی

    پھر جرأت گناہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

    مغرور تھا کمال سخن پر بہت حفیظؔ

    ہم نے بھی واہ واہ نہ کی ہم بھی چپ رہے

    مآخذ:

    • کتاب : Kulliyat-e-Hafeez Jalandhari (Pg. 405)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY