وحشت دل صلۂ آبلہ پائی لے لے

احمد فراز

وحشت دل صلۂ آبلہ پائی لے لے

احمد فراز

MORE BYاحمد فراز

    وحشت دل صلۂ آبلہ پائی لے لے

    مجھ سے یارب مرے لفظوں کی کمائی لے لے

    عقل ہر بار دکھاتی تھی جلے ہاتھ اپنے

    دل نے ہر بار کہا آگ پرائی لے لے

    میں تو اس صبح درخشاں کو تونگر جانوں

    جو مرے شہر سے کشکول گدائی لے لے

    تو غنی ہے مگر اتنی ہیں شرائط تیری

    وہ محبت جو ہمیں راس نہ آئی لے لے

    ایسا نادان خریدار بھی کوئی ہوگا

    جو ترے غم کے عوض ساری خدائی لے لے

    اپنے دیوان کو گلیوں میں لیے پھرتا ہوں

    ہے کوئی جو ہنر زخم نمائی لے لے

    میری خاطر نہ سہی اپنی انا کی خاطر

    اپنے بندوں سے تو پندار خدائی لے لے

    اور کیا نذر کروں اے غم دل دار فرازؔ

    زندگی جو غم دنیا سے بچائی لے لے

    مآخذ:

    • کتاب : kulliyat-e-ahmad faraaz (Pg. 259)
    • Author : Ahmad faraz
    • مطبع : Fareed book depot(pvt)ltd (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY