وہ سو رہا ہے خدا دور آسمانوں میں

عبد الرحیم نشتر

وہ سو رہا ہے خدا دور آسمانوں میں

عبد الرحیم نشتر

MORE BYعبد الرحیم نشتر

    وہ سو رہا ہے خدا دور آسمانوں میں

    فرشتے لوریاں گاتے ہیں اس کے کانوں میں

    زمیں پہ گرتے ہیں کٹ کٹ کے سر فرشتوں کے

    عجیب زلزلہ آیا ہے آسمانوں میں

    سڑک پہ آ گئے سب لوگ بلبلاتے ہوئے

    نہ جانے کون مکیں آ گئے مکانوں میں

    پھٹے پرانے بدن سے کسے خرید سکوں

    سجے ہیں کانچ کے پیکر بڑی دکانوں میں

    وہیں پگھل کے نہ رہ جائے میرا سنگ صدا

    کہ زرد زہر کا پردہ ہے اس کے کانوں میں

    نکل کے زرد چراغوں سے زہر کا آسیب

    پہنچ گیا ہے مرے گھر مری دکانوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY