محفل آرا تھے مگر پھر کم نما ہوتے گئے

منیر نیازی

محفل آرا تھے مگر پھر کم نما ہوتے گئے

منیر نیازی

MORE BY منیر نیازی

    محفل آرا تھے مگر پھر کم نما ہوتے گئے

    دیکھتے ہی دیکھتے ہم کیا سے کیا ہوتے گئے

    نا شناسی دہر کی تنہا ہمیں کرتی گئی

    ہوتے ہوتے ہم زمانے سے جدا ہوتے گئے

    منتظر جیسے تھے در شہر فراق آثار کے

    اک ذرا دستک ہوئی در دم میں وا ہوتے گئے

    حرف پردہ پوش تھے اظہار دل کے باب میں

    حرف جتنے شہر میں تھے حرف لا ہوتے گئے

    وقت کس تیزی سے گزرا روزمرہ میں منیرؔ

    آج کل ہوتا گیا اور دن ہوا ہوتے گئے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    محفل آرا تھے مگر پھر کم نما ہوتے گئے نعمان شوق

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY