یہ کیسی ہجرتیں ہیں موسموں میں

خالد صدیقی

یہ کیسی ہجرتیں ہیں موسموں میں

خالد صدیقی

MORE BY خالد صدیقی

    یہ کیسی ہجرتیں ہیں موسموں میں

    پرندے بھی نہیں ہیں گھونسلوں میں

    بھڑک اٹھیں گے شعلے جنگلوں میں

    اگر جگنو بھی چمکا جھاڑیوں میں

    یہ کن سوچوں کی دیمک رینگتی ہے

    مرے ماتھے کی گہری سلوٹوں میں

    رقم ہے چہرہ چہرہ جو کہانی

    کن افسانوں میں ہے کن ناولوں میں

    بہت تنہا ہے وہ اونچی حویلی

    مرے گاؤں کے ان کچے گھروں میں

    مآخذ:

    • کتاب : Funoon (Monthly) (Pg. 394)
    • Author : Ahmad Nadeem Qasmi
    • مطبع : 4 Maklood Road, Lahore (Edition Nov. Dec. 1985,Issue No. 23)
    • اشاعت : Edition Nov. Dec. 1985,Issue No. 23

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY