یوں نہ ٹپکا تھا لہو دیدۂ تر سے پہلے

جلیل مانک پوری

یوں نہ ٹپکا تھا لہو دیدۂ تر سے پہلے

جلیل مانک پوری

MORE BYجلیل مانک پوری

    یوں نہ ٹپکا تھا لہو دیدۂ تر سے پہلے

    دیکھنا آگ لگی پھر اسی گھر سے پہلے

    جیسے جیسے در دل دار قریب آتا ہے

    دل یہ کہتا ہے کہ پہنچوں میں نظر سے پہلے

    نامۂ یار پڑھوں میں ابھی جلدی کیا ہے

    نامہ بر کو تو لگا لوں میں جگر سے پہلے

    بے حجابی جو سہی ہے تری شوخ آنکھوں کی

    رسم پردے کی اٹھے گی اسی گھر سے پہلے

    اے جلیلؔ آپ بھی کس دھیان میں ہیں خیر تو ہے

    خواہش قدر ہنر کسب ہنر سے پہلے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY