یوں تو پہلے بھی ہوئے اس سے کئی بار جدا

احمد فراز

یوں تو پہلے بھی ہوئے اس سے کئی بار جدا

احمد فراز

MORE BY احمد فراز

    یوں تو پہلے بھی ہوئے اس سے کئی بار جدا

    لیکن اب کے نظر آتے ہیں کچھ آثار جدا

    گر غم سود و زیاں ہے تو ٹھہر جا اے جاں

    کہ اسی موڑ پہ یاروں سے ہوئے یار جدا

    دو گھڑی اس سے رہو دور تو یوں لگتا ہے

    جس طرح سایۂ دیوار سے دیوار جدا

    یہ جدائی کی گھڑی ہے کہ جھڑی ساون کی

    میں جدا گریہ کناں ابر جدا یار جدا

    کج کلاہوں سے کہے کون کہ اے بے خبروں

    طوق گردن سے نہیں طرۂ دستار جدا

    کوئے جاناں میں بھی خاصا تھا طرح دار فرازؔ

    لیکن اس شخص کی سج دھج تھی سر دار جدا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نصرت فتح علی خان

    نصرت فتح علی خان

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    یوں تو پہلے بھی ہوئے اس سے کئی بار جدا نعمان شوق

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY