زخموں کا بیوپاری ہے

اسلم حبیب

زخموں کا بیوپاری ہے

اسلم حبیب

MORE BYاسلم حبیب

    زخموں کا بیوپاری ہے

    اچھی ساہو کاری ہے

    بوجھل بوجھل پلکوں پر

    رات ابھی تک طاری ہے

    بس اک پتھر جھگی کا

    شیش محل پر بھاری ہے

    سانپ ڈسے اک عمر ہوئی

    نشہ اب تک طاری ہے

    چند کہیں یہ فیشن ہے

    چند کہیں بد کاری ہے

    امن عالم کی خاطر

    جنگ یگوں سے جاری ہے

    میں ہی اسلمؔ سچا ہوں

    جھوٹی دنیا ساری ہے

    مآخذ
    • کتاب : Apne Ghar Tak Aa Pauhncha Hoon (Pg. 41)
    • Author : Aslam Habib
    • مطبع : Educational Publishing House, Delhi (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY