ٹوٹا تھا گھر میں کیا کیا یہ عرض پھر کروں گا

امیر الاسلام ہاشمی

ٹوٹا تھا گھر میں کیا کیا یہ عرض پھر کروں گا

امیر الاسلام ہاشمی

MORE BYامیر الاسلام ہاشمی

    ٹوٹا تھا گھر میں کیا کیا یہ عرض پھر کروں گا

    پھر گھر میں کیا ہوا تھا یہ عرض پھر کروں گا

    اتنا بڑا لفافہ اور کام تھا ذرا سا

    کیا کام تھا ذرا سا یہ عرض پھر کروں گا

    ملا نہ کیا کیا تھا ملا نہ کیا کیا ہے

    ملا کرے گا کیا کیا یہ عرض پھر کروں گا

    دیکھا جو شیخ جی نے بولے کہ مختصر ہے

    وہ کیا ہے مختصر سا یہ عرض پھر کروں گا

    شانوں پہ جو پڑا تھا کہنے کو تھا دوپٹہ

    کیا کچھ ڈھکا چھپا تھا یہ عرض پھر کروں گا

    لڑکی کلاسکی کی تھی لڑکا کلاسیکل تھا

    کیسا تھا وہ دو شاخہ یہ عرض پھر کروں گا

    عرق النساء کا نسخہ مہر النسا نے لکھا

    نسخے میں کیا لکھا تھا یہ عرض پھر کروں گا

    بے وزن سب تھے شاعر رقعے مگر تھے وزنی

    رقعوں کا وزن کیا تھا یہ عرض پھر کروں گا

    لڑکی نے بھی قبولا لڑکے نے بھی قبولا

    دونوں نے کیا قبولا یہ عرض پھر کروں گا

    کچھ عرض کر دیا ہے کچھ عرض پھر کروں گا

    کیا عرض پھر کروں گا یہ عرض پھر کروں گا

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے