ہسٹریا

جاوید انور

ہسٹریا

جاوید انور

MORE BYجاوید انور

    وہ خاموش تھی

    اپنے دوزخ میں جلتی ہوئی

    نیلگوں پانیوں کے شکنجے میں جکڑی ہوئی

    اک مچلتی ہوئی موج مہتاب کی سمت لپکی

    مگر

    ریت پر آ گری سیپ اگلتی ہوئی

    خامشی کے بھنور سے نکلتی ہوئی

    وہ ہنسی اور ہنسی

    بریزیر میں سے باہر پھسلتی ہوئی

    اب وہ لڑکی نہیں صرف انگڑائی تھی

    اک توانائی تھی

    نیم وا آنکھ میں کسمساتی ہوئی

    ہاتھ ملتی ہوئی

    اک سمندر تھا بپھرا ہوا

    اک شب تھی نہ ڈھلتی ہوئی

    مأخذ :
    • کتاب : Jalta Hai Badan (Pg. 38)
    • Author : Zahid Hasan
    • مطبع : Apnaidara, Lahore (2002)
    • اشاعت : 2002

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY