محافظ

MORE BY مصداق اعظمی

    جو تیری نیندوں کو جاگتا تھا

    جو تیری کھانسی کو کھانستا تھا

    جو تیری بارش کو بھیگتا تھا

    جو تیری سردی کو ہانپتا تھا

    جو اپنے حصے کے سارے لقمے

    تجھے کھلا کے ڈکارتا تھا

    جو اپنے ہاتھوں کے سخت چھالے

    چھپا کے تجھ کو دلارتا تھا

    جو اپنے کپڑوں میں تیرے کپڑے کے

    ناپ رکھ رکھ کے ناپتا تھا

    جو تیرے زنداں کی قید تجھ کو

    رہائی دے کر کے کاٹتا تھا

    جو تیرے آنسو کو اپنی آنکھوں سے

    سوچتا تھا اور پوچھتا تھا

    تجھے چلانے کے واسطے جو

    ہر ایک موسم میں دوڑتا تھا

    وہی یہ بوڑھا

    وہی یہ لاغر

    وہی اپاہج

    وہی یہ پاگل

    وہی یہ وحشی

    وہی یہ بھوکا

    وہی یہ ننگا

    وہی نکما

    ہے باپ تیرا

    مآخذ:

    • کتاب : Scan File Mail By Salim Saleem

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY