والد صاحب کی یاد میں

راشد جمال فاروقی

والد صاحب کی یاد میں

راشد جمال فاروقی

MORE BY راشد جمال فاروقی

    یہ تو صدیوں کا قصہ تھا

    یہاں تو ایک بڑا سا پیڑ ہوا کرتا تھا

    جلتی، تپتی، بھنتی اور سلگتی رت میں

    اس کے نیچے

    یہیں کہیں پر

    ایک جزیرہ سا آباد رہا کرتا تھا

    خنک خنک سائے میں

    ہنستے ،گاتے مسکاتے لوگوں کی

    اک بستی تھی

    یہاں تو ایک بڑا سا پیڑ ہوا کرتا تھا

    یہی دھوپ

    جو آج یہاں پر چیخ رہی ہے

    پل بھر سستا لینے کو ترسا کرتی تھی

    یہ تو صدیوں کا قصہ تھا

    یہاں تو ایک بڑا سا پیڑ ہوا کرتا تھا

    RECITATIONS

    راشد جمال فاروقی

    راشد جمال فاروقی

    راشد جمال فاروقی

    والد صاحب کی یاد میں راشد جمال فاروقی

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY