بول

MORE BYفیض احمد فیض

    بول کہ لب آزاد ہیں تیرے

    بول زباں اب تک تیری ہے

    تیرا ستواں جسم ہے تیرا

    بول کہ جاں اب تک تیری ہے

    دیکھ کہ آہن گر کی دکاں میں

    تند ہیں شعلے سرخ ہے آہن

    کھلنے لگے قفلوں کے دہانے

    پھیلا ہر اک زنجیر کا دامن

    بول یہ تھوڑا وقت بہت ہے

    جسم و زباں کی موت سے پہلے

    بول کہ سچ زندہ ہے اب تک

    بول جو کچھ کہنا ہے کہہ لے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    Urdu Studio

    Urdu Studio

    زہرا نگاہ

    زہرا نگاہ

    RECITATIONS

    فیض احمد فیض

    فیض احمد فیض

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    فیض احمد فیض

    بول فیض احمد فیض

    مأخذ :
    • کتاب : Nuskha Hai Wafa (Pg. 81)

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY