aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

نہ دیکھو

MORE BYغوث خواہ مخواہ حیدرآبادی

    دکھے گا اور میرا من نہ دیکھو

    بڑھے گی اور بھی الجھن نہ دیکھو

    ہنساتا ہوں سبھوں کو بس یہ دیکھو

    مرا بھیگا ہوا دامن نہ دیکھو

    تم اپنے چاک دامن کی خبر لو

    مرا بوسیدہ پیراہن نہ دیکھو

    خود اپنے آپ سے ڈر جاؤ گے تم

    اندھیرے میں کبھی درپن نہ دیکھو

    نہ حرف آئے کہیں مردانگی پر

    بری نظروں سے حسن زن نہ دیکھو

    اگر ہے حسن بے پردہ تو دیکھو

    مگر تم جانب چلمن نہ دیکھو

    سہی لکھو تو آنکھیں بند کر لو

    جو ہوتی ہے کوئی قدغن نہ دیکھو

    فقط تنقید ہی کرنے کی خاطر

    نظر والوں کسی کا فن نہ دیکھو

    کسی بیکس کی دختر بیاہ لاؤ

    شرافت دیکھو اس کا دھن نہ دیکھو

    یہ دیکھو گھر میں دیواریں ہیں چھت ہے

    بڑا چھوٹا کبھی آنگن نہ دیکھو

    ابھی سب زخم تازہ اور ہرے ہیں

    ابھی تم ؔخواہ مخواہ ناخن نہ دیکھو

    مأخذ:

    (Pg. 72)

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے