Allama Iqbal's Photo'

علامہ اقبال

1877 - 1938 | لاہور, پاکستان

عظیم اردو شاعر اور 'سارے جہاں سے اچھا...' و 'لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری' جیسے شہرہ آفاق ترانے کے خالق

عظیم اردو شاعر اور 'سارے جہاں سے اچھا...' و 'لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری' جیسے شہرہ آفاق ترانے کے خالق

غزل

اپنی جولاں_گاہ زیر_آسماں سمجھا تھا میں

اگر کج_رو ہیں انجم آسماں تیرا ہے یا میرا

پریشاں ہو کے میری خاک آخر دل نہ بن جائے

تو ابھی رہ_گزر میں ہے قید_مقام سے گزر

تو اے اسیر_مکاں لا_مکاں سے دور نہیں

حادثہ وہ جو ابھی پردۂ_افلاک میں ہے

خرد کے پاس خبر کے سوا کچھ اور نہیں

خرد_مندوں سے کیا پوچھوں کہ میری ابتدا کیا ہے

خودی کی شوخی و تندی میں کبر_و_ناز نہیں

دل سوز سے خالی ہے نگہ پاک نہیں ہے

زمستانی ہوا میں گرچہ تھی شمشیر کی تیزی

ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں

فطرت کو خرد کے روبرو کر

گیسوئے_تابدار کو اور بھی تابدار کر

مجھے آہ_و_فغان_نیم_شب کا پھر پیام آیا

مکتبوں میں کہیں رعنائی_افکار بھی ہے

میری نوائے_شوق سے شور حریم_ذات میں

نہ تخت_و_تاج میں نے لشکر_و_سپاہ میں ہے

نہ تو زمیں کے لیے ہے نہ آسماں کے لیے

نہ تو زمیں کے لیے ہے نہ آسماں کے لیے

وہ حرف_راز کہ مجھ کو سکھا گیا ہے جنوں

وہی میری کم_نصیبی وہی تیری بے_نیازی

کبھی اے حقیقت_منتظر نظر آ لباس_مجاز میں

نظم

ابلیس کی مجلس_شوریٰ

ابو_العلا_معری

ترانۂ_ہندی

مرزا غالبؔ

مسجد_قرطبہ

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Added to your favorites

Removed from your favorites