Daniyal Tareer's Photo'

دانیال طریر

1980 - 2015 | کوئٹہ, پاکستان

پاکستان کے ممتاز ترین نوجوان شاعر، بہت کم عمر میں ایک مہلک بیماری کا شکار ہو کر وفات پائی

پاکستان کے ممتاز ترین نوجوان شاعر، بہت کم عمر میں ایک مہلک بیماری کا شکار ہو کر وفات پائی

دانیال طریر

غزل 24

نظم 9

اشعار 7

خواب کا کیا ہے رات کے نقش و نگار بناؤ

رات کے نقش و نگار بناؤ خواب کا کیا ہے

شیلف پہ الٹا کر کے رکھ دو اور بسرا دو

گل دانوں میں پھول سجاؤ خواب کا کیا ہے

ایک بے چہرہ مسافر رنگ اوڑھے

دھند میں چلتے ہوئے دیکھا گیا ہے

خواب جزیرہ بن سکتے تھے نہیں بنے

ہم بھی قصہ بن سکتے تھے نہیں بنے

دیکھنا یہ ہے کہ جنگل کو چلانے کے لئے

مشورہ ریچھ سے اور چیل سے ہوگا کہ نہیں

کتاب 5

 

"کوئٹہ" کے مزید شعرا

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے