Farooq Engineer's Photo'

فاروق انجینئر

1960

غزل 27

اشعار 2

پچھلا برس تو خون رلا کر گزر گیا

کیا گل کھلائے گا یہ نیا سال دوستو

  • شیئر کیجیے

برس رہی ہے اداسی تمام آنگن میں

وہ رت جگوں کی حویلی بڑے عذاب میں ہے

  • شیئر کیجیے
 

دوہا 3

آنکھوں کو یوں بھا گیا اس کا روپ انوپ

سردی میں اچھی لگے جیسے کچی دھوپ

  • شیئر کیجیے

سمے کے دھارے دیکھ کر ہوتا ہے وشواس

ایک نہ ایک دن دیکھنا شیر چریں گے گھاس

  • شیئر کیجیے

کس کو اب دکھلائیں ہم اپنے دل کا خون

سنتے آئے ہیں یہی اندھا ہے قانون

  • شیئر کیجیے
 

کتاب 1

صحرا میں گم ندّی

 

1999