noImage

الیاس عشقی

1922 - 2007 | پاکستان

الیاس عشقی

غزل 6

نظم 1

 

اشعار 5

اس الجھن کو سلجھانے کی کون سی ہے تدبیر لکھو

عشق اگر ہے جرم تو مجرم رانجھا ہے یا ہیر لکھو

کوئی قریہ کوئی دیار ہو کہیں ہم اکیلے نہیں رہے

تری جستجو میں جہاں گئے وہیں ساتھ در بدری رہی

اس کی بالک ہٹ کے آگے گھر چھوڑا بیراگ لیا

دیکھیں کیا دن دکھلاتا ہے اب یہ مورکھ من بابا

وقت آیا تو خون سے اپنے داغ ندامت دھو لیں گے

سایۂ زلف میں جاگنے والے سایۂ دار میں سو لیں گے

وہی آگ اپنا نصیب تھی کہ تمام عمر جلا کیے

جو لگائی تھی کبھی عشق نے وہی آگ دل میں بھری رہی

کتاب 1

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے