aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
Makhmoor Saeedi's Photo'

مخمور سعیدی

1938 - 2010 | دلی, انڈیا

ممتازجدید شاعر/ رسالہ ’تحریک‘ سے وابستگی

ممتازجدید شاعر/ رسالہ ’تحریک‘ سے وابستگی

مخمور سعیدی کے دوہے

صاف بتا دے جو تو نے دیکھا ہے دن رات

دنیا کے ڈر سے نہ رکھ دل میں دل کی بات

کون مسافر کر سکا منزل کا دیدار

پلک جھپکتے کھو گئے راہوں کے آثار

ڈوبنے والوں پر کسے دنیا نے آوازے

ساحل سے کرتی رہی طوفاں کے اندازے

کچھ کہنے تک سوچ لے اے بد گو انسان

سنتے ہیں دیواروں کے بھی ہوتے ہیں کان

تنہا تو رہ جائے گا کوئی نہ ہوگا ساتھ

جیسے ہی یہ لوگ ہیں پکڑ انہی کا ہاتھ

روش روش پر باغ ہیں کانٹے کلیاں پھول

میں نے کانٹے چن لیے ہوئی یہ کیسی بھول

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے