منور خان غافل

غزل 17

اشعار 32

بعد مرنے کے مری قبر پہ آیا غافلؔ

یاد آئی مرے عیسیٰ کو دوا میرے بعد

لیلۃ القدر ہے ہر شب اسے ہر روز ہے عید

جس نے مے خانہ میں ماہ رمضاں دیکھا ہے

  • شیئر کیجیے

وہ صبح کو اس ڈر سے نہیں بام پر آتا

نامہ نہ کوئی باندھ دے سورج کی کرن میں

  • شیئر کیجیے

آ کے سجادہ نشیں قیس ہوا میرے بعد

نہ رہی دشت میں خالی مری جا میرے بعد

جیتے جی قدر بشر کی نہیں ہوتی صاحب

یاد آئے گی تمہیں میری وفا میرے بعد

  • شیئر کیجیے

کتاب 1

دیوان غافل

 

1872

 

"رام پور" کے مزید شعرا

  • منیرؔ  شکوہ آبادی منیرؔ  شکوہ آبادی
  • نظام رامپوری نظام رامپوری
  • اظہر عنایتی اظہر عنایتی
  • شاد عارفی شاد عارفی
  • شاہد عشقی شاہد عشقی
  • سید یوسف علی خاں ناظم سید یوسف علی خاں ناظم
  • اکبر علی خان عرشی زادہ اکبر علی خان عرشی زادہ
  • محشر عنایتی محشر عنایتی
  • عروج قادری عروج قادری
  • طاہر فراز طاہر فراز