پون کمار

غزل 25

اشعار 2

کلیجہ رہ گیا اس وقت پھٹ کر

کہا جب الوداع اس نے پلٹ کر

جسارت کے رہتے بھی خاموش ہونا

ہے اس کے سوا کیا ستم پوش ہونا

 

تصویری شاعری 1

سنی ہر بات اپنے رہنما کی یہی اک بھول ہم نے بارہا کی ہوئی جو زندگی سے اتفاقاً وہی بھول اس نے پھر اک مرتبہ کی مجھی میں گونجتی ہیں سب صدائیں مگر پھر بھی ہے خاموشی بلا کی ہر اک کردار میں ڈھلنے کی چاہت متانت دیکھیے بہروپیا کی ازل کے پیشتر بھی کچھ تو ہوگا کہاں پھر حد ملے_گی ابتدا کی تلاطم ہیں مرے میری ہیں لہریں مجھے کیوں جستجو ہو ناخدا کی ہمارے ساتھ ہو کر بھی نہیں ہے شکایت کیا کریں اس گمشدہ کی ہر اک آہٹ تری آمد کا دھوکہ کبھی تو لاج رکھ لے اس خطا کی سراپا ہائے اس نازک بدن کا کوئی تصویر جیسے اپسرا کی

 

"لکھنؤ" کے مزید شعرا

  • مصحفی غلام ہمدانی مصحفی غلام ہمدانی
  • جرأت قلندر بخش جرأت قلندر بخش
  • میر حسن میر حسن
  • حیدر علی آتش حیدر علی آتش
  • امداد علی بحر امداد علی بحر
  • عزیز بانو داراب وفا عزیز بانو داراب وفا
  • عرفان صدیقی عرفان صدیقی
  • ارشد علی خان قلق ارشد علی خان قلق
  • ولی اللہ محب ولی اللہ محب
  • منور رانا منور رانا