noImage

وزیر علی صبا لکھنؤی

1793 - 1855 | لکھنؤ, انڈیا

وزیر علی صبا لکھنؤی

غزل 28

اشعار 56

دل میں اک درد اٹھا آنکھوں میں آنسو بھر آئے

بیٹھے بیٹھے ہمیں کیا جانئے کیا یاد آیا

  • شیئر کیجیے

بات بھی آپ کے آگے نہ زباں سے نکلی

لیجئے آئے تھے ہم سوچ کے کیا کیا دل میں

  • شیئر کیجیے

آپ ہی اپنے ذرا جور و ستم کو دیکھیں

ہم اگر عرض کریں گے تو شکایت ہوگی

  • شیئر کیجیے

باقی رہے نہ فرق زمین آسمان میں

اپنا قدم اٹھا لیں اگر درمیاں سے ہم

  • شیئر کیجیے

نہ کریں آپ وفا ہم کو کیا

بے وفا آپ ہی کہلائیے گا

کتاب 4

 

متعلقہ شعرا

"لکھنؤ" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے