Filter : Date

Section:

کیا آپ کو معلوم ہے؟

پروین

پروین شاکر نے سولہ سال کی عمر سے شاعری شروع کر دی تھی. پہلے انھوں نے 'بینا' تخلص اپنایا تھا۔ کیا آپ جانتے ہیں کہ ان  کا نک نیم کیا تھا ؟ 
 ۔ پروین نے مشہور نقاد نظیر صریقی کے نام  اپنے ایک خط میں لکھا تھا 
" پارو میرا نک نیم ہے اور پارہ بھی۔ اس پارو کو آپ شہ پارہ یا مہ پارہ قسم کی چیز نہ سمجھئیے گا بلکہ یہاں پارہ اصلی سائنسی معنوں میں استعمال ہوا ہے۔ بچپن  میں اس قدر شریر ہوا کرتی تھی کہ میری سیمابی طبیعت کو دیکھتے ہوئے گھر والوں نے مجھے پارہ کہنا شروع کردیا۔ اب شرارت تو ختم ہوگئ لیکن نک نیم رہ گیا۔ کچھ 'پارہ'  کہتے ہیں کچھ ٰ  پارو کہتے ہیں۔
پروین شاکر کے انتقال کے بعد سن 1997میں یہ خطوط  "پروین شاکر کے خطوط نظیر صدیقی کے نام " سے کتابی شکل میں شائع  ہوئے۔ نظیر صدیقی نے اس کتاب کے پیش لفظ میں لکھا ہے  "پروین شاکر سے میرے تعلقات جنوری 1978سے شروع ہو کر کوئ سوا سال تک قائم رہے۔ اس دوران ان کے پچیس چھبیس خط آئے ہیں۔ یہ تعلقات جہاں تک چل سکے اچھے ہی چلے۔ لیکن جب ختم ہونے پر آئے تو اچانک ختم ہوگئے"۔