Salam Sandelvi's Photo'

سلام سندیلوی

1919 - 2000 | گورکھپور, انڈیا

سلام سندیلوی

اشعار 21

خوشی کے پھول کھلے تھے تمہارے ساتھ کبھی

پھر اس کے بعد نہ آیا بہار کا موسم

  • شیئر کیجیے

شبنم نے رو کے جی ذرا ہلکا تو کر لیا

غم اس کا پوچھئے جو نہ آنسو بہا سکے

  • شیئر کیجیے

سو بار آئی ہونٹوں پہ جھوٹی ہنسی مگر

اک بار بھی نہ دل سے کبھی مسکرا سکے

  • شیئر کیجیے

کٹے گی کیسے گل نو کی زندگی یارب

کہ اس غریب کا خانوں میں گھر ابھی سے ہے

  • شیئر کیجیے

بہت امید تھی منزل پہ جا کر چین پائیں گے

مگر منزل پہ جب پہنچے تو نظم کارواں بدلا

  • شیئر کیجیے

غزل 3

 

نظم 13

گیت 2

 

کتاب 30

"گورکھپور" کے مزید مصنفین

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے