عاجزی آج ہے ممکن ہے نہ ہو کل مجھ میں

نصرت مہدی

عاجزی آج ہے ممکن ہے نہ ہو کل مجھ میں

نصرت مہدی

MORE BYنصرت مہدی

    عاجزی آج ہے ممکن ہے نہ ہو کل مجھ میں

    اس طرح عیب نکالو نہ مسلسل مجھ میں

    زندگی ہے مری ٹھہرا ہوا پانی جیسے

    ایک کنکر سے بھی ہو جاتی ہے ہلچل مجھ میں

    میں بظاہر تو ہوں اک ذرہ زمیں پر لیکن

    اپنے ہونے کا ہے احساس مکمل مجھ میں

    آج بھی ہے تری آنکھوں میں تپش صحرا کی

    کروٹیں لیتا ہے اب بھی کوئی بادل مجھ میں

    جو اندھیروں میں مرے ساتھ چلا بچپن سے

    اب وہ تارا بھی کہیں ہو گیا اوجھل مجھ میں

    خواہشیں آ کے لپٹ جاتی ہیں سانپوں کی طرح

    جب مہکتا ہے تری یاد کا صندل مجھ میں

    اب وہ آیا تو بھٹک جائے گا رستہ نصرتؔ

    اب گھنا ہو گیا تنہائی کا جنگل مجھ میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY