اب تو ہر ایک اداکار سے ڈر لگتا ہے

افضل الہ آبادی

اب تو ہر ایک اداکار سے ڈر لگتا ہے

افضل الہ آبادی

MORE BYافضل الہ آبادی

    اب تو ہر ایک اداکار سے ڈر لگتا ہے

    مجھ کو دشمن سے نہیں یار سے ڈر لگتا ہے

    کیسے دشمن کے مقابل وہ ٹھہر پائے گا

    جس کو ٹوٹی ہوئی تلوار سے ڈر لگتا ہے

    وہ جو پازیب کی جھنکار کا شیدائی ہو

    اس کو تلوار کی جھنکار سے ڈر لگتا ہے

    مجھ کو بالوں کی سفیدی نے خبردار کیا

    زندگی اب تری رفتار سے ڈر لگتا ہے

    کر دیں مصلوب انہیں لاکھ زمانے والے

    حق پرستوں کو کہاں دار سے ڈر لگتا ہے

    وہ کسی طرح بھی تیراک نہیں ہو سکتا

    دور سے ہی جسے منجدھار سے ڈر لگتا ہے

    میرے آنگن میں ہے وحشت کا بسیرا افضلؔ

    مجھ کو گھر کے در و دیوار سے ڈر لگتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY