گانٹھی ہے اس نے دوستی اک پیش امام سے

عادل منصوری

گانٹھی ہے اس نے دوستی اک پیش امام سے

عادل منصوری

MORE BYعادل منصوری

    گانٹھی ہے اس نے دوستی اک پیش امام سے

    عادلؔ اٹھا لو ہاتھ دعا و سلام سے

    پانی نے راستہ نہ دیا جان بوجھ کر

    غوطے لگائے پھر بھی رہے تشنہ کام سے

    میں اس گلی سے سر کو جھکائے گزر گیا

    چلغوزے پھینکتی رہی وہ مجھ پہ بام سے

    وہ کون تھا جو دن کے اجالے میں کھو گیا

    یہ چاند کس کو ڈھونڈنے نکلا ہے شام سے

    کونے میں بادشاہ پڑا اونگھتا رہا

    ٹیبل پہ رات کٹ گئی بیگم غلام سے

    نشہ سا ڈولتا ہے ترے انگ انگ پر

    جیسے ابھی بھگو کے نکالا ہو جام سے

    مأخذ :
    • کتاب : Hashr ki subh darakhshaz ho (Pg. 227)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے