گمشدہ سائے ڈھونڈھتا ہوں میں

عشرت قادری

گمشدہ سائے ڈھونڈھتا ہوں میں

عشرت قادری

MORE BYعشرت قادری

    گمشدہ سائے ڈھونڈھتا ہوں میں

    لمحہ بن کر ٹھہر گیا ہوں میں

    ظاہری شکل میری زندہ ہے

    اور اندر سے مر گیا ہوں میں

    ریزہ ریزہ کیا حوادث نے

    اپنے ذرات چن رہا ہوں میں

    کون دیکھے گا مجھ میں اب چہرہ

    آئینہ تھا بکھر گیا ہوں میں

    وہ رفاقت ہے اب نہ وہ شفقت

    کتنی آنکھوں میں جھانکتا ہوں میں

    سسکیاں چیخ آہ نغمہ فغاں

    کتنے پردوں کی اک صدا ہوں میں

    کوئی منصف سزا نہ دے لیکن

    قاتلو تم کو جانتا ہوں میں

    مآخذ:

    • کتاب : Sahar Numa (Pg. 25)
    • Author : Ishrat Qadri
    • مطبع : Madhya Pradesh Urdu Academy (1984)
    • اشاعت : 1984

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY