اک تجسس دل میں ہے یہ کیا ہوا کیسے ہوا

خاطر غزنوی

اک تجسس دل میں ہے یہ کیا ہوا کیسے ہوا

خاطر غزنوی

MORE BYخاطر غزنوی

    اک تجسس دل میں ہے یہ کیا ہوا کیسے ہوا

    جو کبھی اپنا نہ تھا وہ غیر کا کیسے ہوا

    میں کہ جس کی میں نے تو دیکھا نہ تھا سوچا نہ تھا

    سوچتا ہوں وہ صنم میرا خدا کیسے ہوا

    ہے گماں دیوار زنداں کا فصیل شہر پر

    وہ جو اک شعلہ تھا ہر دل میں فنا کیسے ہوا

    رنگ خوں روز ازل سے ہے نشان انقلاب

    زیست کا عنواں مگر رنگ حنا کیسے ہوا

    غزنوی تو بت شکن ٹھہرا مگر خاطرؔ یہ کیا

    تیرے مسلک میں اسے سجدہ روا کیسے ہوا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اک تجسس دل میں ہے یہ کیا ہوا کیسے ہوا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY