کوئی رسوائی ہے نہ شہرت ہے

خورشید ربانی

کوئی رسوائی ہے نہ شہرت ہے

خورشید ربانی

MORE BYخورشید ربانی

    کوئی رسوائی ہے نہ شہرت ہے

    یہ محبت ہے یا کرامت ہے

    شوق میرا نہیں جنوں انگیز

    سو بیاباں کو مجھ سے وحشت ہے

    رنگ کیا کیا ہیں زیر بند قبا

    در و دیوار تک کو حیرت ہے

    وہ تغافل شعار کیا جانے

    عشق تو حسن کی ضرورت ہے

    میرے خورشید خوش گمان نہ ہو

    مسکرانا تو اس کی عادت ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY