مدت سے کوئی شور بپا ہو نہیں رہا

کاشف حسین غائر

مدت سے کوئی شور بپا ہو نہیں رہا

کاشف حسین غائر

MORE BYکاشف حسین غائر

    مدت سے کوئی شور بپا ہو نہیں رہا

    اور ہاتھ ہے کہ دل سے جدا ہو نہیں رہا

    اک صبح تھی جو شام میں تبدیل ہو گئی

    اک رنگ ہے جو رنگ حنا ہو نہیں رہا

    ہم بھی وہی دیا بھی وہی رات بھی وہی

    کیا بات ہے جو رقص ہوا ہو نہیں رہا

    ہم بھی کسی خیال کے سناہٹوں میں گم

    تم سے بھی پاس عہد وفا ہو نہیں رہا

    کیا چاہتی ہے ہم سے ہماری یہ زندگی

    کیا قرض ہے جو ہم سے ادا ہو نہیں رہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY