مجھ سا بیتاب یہاں کوئی نہیں میرے سوا

ارشد عبد الحمید

مجھ سا بیتاب یہاں کوئی نہیں میرے سوا

ارشد عبد الحمید

MORE BY ارشد عبد الحمید

    مجھ سا بیتاب یہاں کوئی نہیں میرے سوا

    یعنی برباد جہاں کوئی نہیں میرے سوا

    روشنی تھی تو کئی سائے نظر آتے تھے

    تیرگی ہے تو یہاں کوئی نہیں میرے سوا

    بھیڑ میں ایک طرف گوشۂ اخلاص بھی ہے

    غور سے دیکھ وہاں کوئی نہیں میرے سوا

    شہر میرے ہی بھروسے پہ ہو خفتہ جیسے

    ہدف شور سگاں کوئی نہیں میرے سوا

    سر بلندی مری تنہائی تک آ پہنچی ہے

    میں وہاں ہوں کہ جہاں کوئی نہیں میرے سوا

    شعر میں غیر کی تشبیہ کہاں سے آئے

    میری مانند یہاں کوئی نہیں میرے سوا

    چین لکھتا ہے مرے خواب کا راوی راشدؔ

    اس سمندر میں رواں کوئی نہیں میرے سوا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY