یہ جو بیدار دکھائی دیا ہوں

احمد کامران

یہ جو بیدار دکھائی دیا ہوں

احمد کامران

MORE BYاحمد کامران

    یہ جو بیدار دکھائی دیا ہوں

    آخری بار دکھائی دیا ہوں

    وہاں مشکل تھا سنائی دیتا

    شکر ہے یار دکھائی دیا ہوں

    آ حراست سے چھڑا ہجراں کو

    میں گرفتار دکھائی دیا ہوں

    پاؤں باندھے ہیں وفا سے جب نے

    تیز رفتار دکھائی دیا ہوں

    جھیل میں چاند گرا تھا اور میں

    جھیل کے پار دکھائی دیا ہوں

    مجھ پہ تصویر لگا دی گئی ہے

    کیا میں دیوار دکھائی دیا ہوں

    جانتا خود کو نہیں ہوں احمدؔ

    خود کو بیکار دکھائی دیا ہوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY