اپنی ہی تیغ ادا سے آپ گھائل ہو گیا

منیر نیازی

اپنی ہی تیغ ادا سے آپ گھائل ہو گیا

منیر نیازی

MORE BY منیر نیازی

    اپنی ہی تیغ ادا سے آپ گھائل ہو گیا

    چاند نے پانی میں دیکھا اور پاگل ہو گیا

    وہ ہوا تھی شام ہی سے رستے خالی ہو گئے

    وہ گھٹا برسی کہ سارا شہر جل تھل ہو گیا

    میں اکیلا اور سفر کی شام رنگوں میں ڈھلی

    پھر یہ منظر میری نظروں سے بھی اوجھل ہو گیا

    اب کہاں ہوگا وہ اور ہوگا بھی تو ویسا کہاں

    سوچ کر یہ بات جی کچھ اور بوجھل ہو گیا

    حسن کی دہشت عجب تھی وصل کی شب میں منیرؔ

    ہاتھ جیسے انتہائے شوق سے شل ہو گیا

    مآخذ:

    • کتاب : kulliyat-e-muniir niyaazii (Pg. 241)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY