باغباں جشن بہاراں نہیں ہونے دیتے

ابرار کرتپوری

باغباں جشن بہاراں نہیں ہونے دیتے

ابرار کرتپوری

MORE BY ابرار کرتپوری

    باغباں جشن بہاراں نہیں ہونے دیتے

    دیپ الفت کے فروزاں نہیں ہونے دیتے

    زہر الفت کا پلاتے ہیں بڑے فخر کے ساتھ

    آپ انسان کو انساں نہیں ہونے دیتے

    خود نمائی میں کچھ اس طرح گرفتار ہیں ہم

    اور لوگوں کو نمایاں نہیں ہونے دیتے

    عقل کو شوخئ باطل میں پھنسانے والے

    قلب کو صاحب ایماں نہیں ہونے دیتے

    غم سے نسبت ہے جنہیں ضبط الم کرتے ہیں

    اشک کو زینت داماں نہیں ہونے دیتے

    روح افکار کو معیار عطا کرتے ہیں

    ہم خیالات کو عریاں نہیں ہونے دیتے

    چند لمحے وہ مرے سامنے رہ کر ابرارؔ

    چشم بیتاب کو حیراں نہیں ہونے دیتے

    مآخذ:

    • Book: Roshani Takhayyul ki (Pg. 36)
    • Author: Abrar Kiratpuri
    • مطبع: Markaz-e-ilm-o-Danish Qudsiya Manzil (2006)
    • اشاعت: 2006

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites