برائے زیب اس کو گوہر و اختر نہیں لگتا

احمد کمال پروازی

برائے زیب اس کو گوہر و اختر نہیں لگتا

احمد کمال پروازی

MORE BYاحمد کمال پروازی

    برائے زیب اس کو گوہر و اختر نہیں لگتا

    وہ خود اک چاند ہے اور چاند کو زیور نہیں لگتا

    خدایا یوں بھی ہو کہ اس کے ہاتھوں قتل ہو جاؤں

    وہی اک ایسا قاتل ہے جو پیشہ ور نہیں لگتا

    اگر عارض پرستی کا عمل اک جرم بنتا ہے

    سزا بھی کاٹ لیں گے کاٹنے سے ڈر نہیں لگتا

    محبت تیر ہے اور تیر باطن چھید دیتا ہے

    مگر نیت غلط ہو تو نشانے پر نہیں لگتا

    رئیس شہر ہو کر بھی وہ اتنا جھک کے ملتا ہے

    کہ اس کے سامنے کوئی بھی قد آور نہیں لگتا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    برائے زیب اس کو گوہر و اختر نہیں لگتا نعمان شوق

    مأخذ :
    • کتاب : Chandi Ka waraq (Pg. 80)
    • Author : Ahmad Kamal Parvazi
    • مطبع : Surkhwab Publication (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے