بیاباں کو پشیمانی بہت ہے

مظفر ابدالی

بیاباں کو پشیمانی بہت ہے

مظفر ابدالی

MORE BYمظفر ابدالی

    بیاباں کو پشیمانی بہت ہے

    کہ شہروں میں بیابانی بہت ہے

    مرے ہنسنے پہ دنیا چونک اٹھی

    مجھے بھی خود پہ حیرانی بہت ہے

    چلو صحرا کو بھی اب آزمائیں

    سنا تھا گھر میں آسانی بہت ہے

    خدا محفوظ رکھے فصل دل کو

    کہیں سوکھا کہیں پانی بہت ہے

    کہیں بادل کہیں پیڑوں کے سائے

    اجالوں پر نگہبانی بہت ہے

    بہکنا میری فطرت میں نہیں پر

    سنبھلنے میں پریشانی بہت ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    مظفر ابدالی

    مظفر ابدالی

    RECITATIONS

    مظفر ابدالی

    مظفر ابدالی,

    مظفر ابدالی

    بیاباں کو پشیمانی بہت ہے مظفر ابدالی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY