بجھتے سورج نے لیا پھر یہ سنبھالا کیسا

زیب غوری

بجھتے سورج نے لیا پھر یہ سنبھالا کیسا

زیب غوری

MORE BY زیب غوری

    بجھتے سورج نے لیا پھر یہ سنبھالا کیسا

    اڑتی چڑیوں کے پروں پر ہے اجالا کیسا

    تم نے بھی دیکھا کہ مجھ کو ہی ہوا تھا محسوس

    گرد اس کے رخ روشن کے تھا ہالا کیسا

    چھٹ گیا جب مری نظروں سے ستاروں کا غبار

    شوق رفتار نے پھر پاؤں نکالا کیسا

    کس نے صحرا میں مرے واسطے رکھی ہے یہ چھاؤں

    دھوپ روکے ہے مرا چاہنے والا کیسا

    زیبؔ موجوں میں لکیروں کی وہ غم تھا کب سے

    گردش رنگ نے پیکر کو اچھالا کیسا

    مآخذ:

    • کتاب : zartaab (Pg. 63)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY