چلو کہ ہم بھی زمانے کے ساتھ چلتے ہیں

صدا انبالوی

چلو کہ ہم بھی زمانے کے ساتھ چلتے ہیں

صدا انبالوی

MORE BYصدا انبالوی

    چلو کہ ہم بھی زمانے کے ساتھ چلتے ہیں

    نہیں بدلتا زمانہ تو ہم بدلتے ہیں

    کسی کو قدر نہیں ہے ہماری قدروں کی

    چلو کہ آج یہ قدریں سبھی بدلتے ہیں

    بلا رہی ہیں ہمیں تلخیاں حقیقت کی

    خیال و خواب کی دنیا سے اب نکلتے ہیں

    بجھی ہے آگ کبھی پیٹ کی اصولوں سے

    یہ ان سے پوچھئے جو گردشوں میں پلتے ہیں

    انہیں نہ تولیے تہذیب کے ترازو میں

    گھروں میں ان کے نہ چولھے نہ دیپ جلتے ہیں

    ذرا سی آس بھی تعبیر کی نہیں جن کو

    دلوں میں خواب وہ کیا سوچ کر مچلتے ہیں

    ہمیں نہ راس زمانے کی محفلیں آئی

    چلو کہ چھوڑ کے اب اس جہاں کو چلتے ہیں

    مزاج تیرے غموں کا صداؔ نرالا ہے

    کبھی غزل تو کبھی گیت بن کے ڈھلتے ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    غلام عباس خاں

    غلام عباس خاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY