اس بزم میں نہ ہوش رہے گا ذرا مجھے

بیخود بدایونی

اس بزم میں نہ ہوش رہے گا ذرا مجھے

بیخود بدایونی

MORE BYبیخود بدایونی

    اس بزم میں نہ ہوش رہے گا ذرا مجھے

    اے شوق ہرزہ تاز کہاں لے چلا مجھے

    یہ درد دل ہی زیست کا باعث ہے چارہ گر

    مر جاؤں گا جو آئی موافق دوا مجھے

    اس ذوق ابتلا کا مزہ اس کے دم سے ہے

    سب کچھ ملا ملا ہو دل مبتلا مجھے

    دیر و حرم کو دیکھ لیا خاک بھی نہیں

    بس اے تلاش یار نہ در در پھرا مجھے

    یہ دل سے دور ہو نہ دکھائے خدا وہ دن

    ظالم ترا خیال ہے دل سے سوا مجھے

    رنج و ملال و حسرت و ارمان و آرزو

    جانے سے ایک دل کے بہت کچھ ملا مجھے

    میں جانتا ہوں آپ ہیں مست اپنے حال میں

    بیخودؔ نہیں ہے آپ سے مطلق گلا مجھے

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 190)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY