عشق نے چٹکی سی لی پھر آ کے میری جاں کے بیچ

شیخ ظہور الدین حاتم

عشق نے چٹکی سی لی پھر آ کے میری جاں کے بیچ

شیخ ظہور الدین حاتم

MORE BY شیخ ظہور الدین حاتم

    عشق نے چٹکی سی لی پھر آ کے میری جاں کے بیچ

    آگ سی کچھ لگ گئی ہے سینۂ بریاں کے بیچ

    اہل معنی جز نہ بوجھے گا کوئی اس رمز کو

    ہم نے پایا ہے خدا کو صورت انساں کے بیچ

    اس سبب میں جنگ شانے سے کروں ہوں بار بار

    دل ہوا ہے گم مرا اس کاکل پیچاں کے بیچ

    زلف و چشم و خال و خط چاروں ہیں دشمن دین کے

    حق رکھے ایماں سلامت ایسے کفرستاں کے بیچ

    نقد دل کھویا ہے ہم نے جان کر اس راہ میں

    فی الحقیقت عاشقوں کو سود ہے نقصاں کے بیچ

    گر عدو میری بدی کرتا ہے خاص و عام میں

    میں اسے رسوا کروں گا باندھ کر دیواں کے بیچ

    رات دن جاری ہے عالم میں مرا فیض سخن

    گو کہ ہوں محتاج پر حاتمؔ ہوں ہندوستاں کے بیچ

    مآخذ:

    • Book : Diwan Zadah (Pg. 161)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY