جیتا ہے صرف تیرے لیے کون مر کے دیکھ

عادل منصوری

جیتا ہے صرف تیرے لیے کون مر کے دیکھ

عادل منصوری

MORE BYعادل منصوری

    جیتا ہے صرف تیرے لیے کون مر کے دیکھ

    اک روز میری جان یہ حرکت بھی کر کے دیکھ

    منزل یہیں ہے آم کے پیڑوں کی چھاؤں میں

    اے شہسوار گھوڑے سے نیچے اتر کے دیکھ

    ٹوٹے پڑے ہیں کتنے اجالوں کے استخواں

    سایہ نما اندھیرے کے اندر اتر کے دیکھ

    پھولوں کی تنگ دامنی کا تذکرہ نہ کر

    خوشبو کی طرح موج صبا میں بکھر کے دیکھ

    تجھ پر کھلیں گے موت کی سرحد کے راستے

    ہمت اگر ہے اس کی گلی سے گزر کے دیکھ

    دریا کی وسعتوں سے اسے ناپتے نہیں

    تنہائی کتنی گہری ہے اک جام بھر کے دیکھ

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    جیتا ہے صرف تیرے لیے کون مر کے دیکھ نعمان شوق

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY