جس طرف چاہوں پہنچ جاؤں مسافت کیسی

عزیز نبیل

جس طرف چاہوں پہنچ جاؤں مسافت کیسی

عزیز نبیل

MORE BYعزیز نبیل

    جس طرف چاہوں پہنچ جاؤں مسافت کیسی

    میں تو آواز ہوں آواز کی ہجرت کیسی

    سننے والوں کی سماعت گئی گویائی بھی

    قصہ گو تو نے سنائی تھی حکایت کیسی

    ہم جنوں والے ہیں ہم سے کبھی پوچھو پیارے

    دشت کہتے ہیں کسے دشت کی وحشت کیسی

    آپ کے خوف سے کچھ ہاتھ بڑھے ہیں لیکن

    دست مجبور کی سہمی ہوئی بیعت کیسی

    پھر نئے سال کی سرحد پہ کھڑے ہیں ہم لوگ

    راکھ ہو جائے گا یہ سال بھی حیرت کیسی

    اور کچھ زخم مرے دل کے حوالے مری جاں

    یہ محبت ہے محبت میں شکایت کیسی

    میں کسی آنکھ سے چھلکا ہوا آنسو ہوں نبیلؔ

    میری تائید ہی کیا میری بغاوت کیسی

    RECITATIONS

    عزیز نبیل

    عزیز نبیل

    عزیز نبیل

    جس طرف چاہوں پہنچ جاؤں مسافت کیسی عزیز نبیل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY