ایسے چھوتے ہیں تصور میں تجھے ہم چپ چاپ

مجاز جے پوری

ایسے چھوتے ہیں تصور میں تجھے ہم چپ چاپ

مجاز جے پوری

MORE BYمجاز جے پوری

    ایسے چھوتے ہیں تصور میں تجھے ہم چپ چاپ

    جیسے پھولوں کو چھوا کرتی ہے شبنم چپ چاپ

    ترک الفت پہ بھی کر جاتے ہیں اکثر گمراہ

    میرے خوابوں کو ترے گیسوئے پر خم چپ چاپ

    جیسے کرتی ہی نہیں تنگ ہمیں یہ معصوم

    کیسے جاتی ہے شب ہجر سحر دم چپ چاپ

    کوئی ملتا ہی نہیں اس کو سخن کا موضوع

    بیٹھی رہتی ہے میرے پاس شب غم چپ چاپ

    شورش وقت نے بخشی نہیں جائے افسوس

    یعنی کرنا ہی پڑا زیست کا ماتم چپ چاپ

    موج ہنگام چراغاں ہے نہ وہ رنگ عبیر

    شوخیٔ عید بھی خاموش محرم چپ چاپ

    میری آنکھیں ہیں ترے حسن کی گویا تصویر

    میں نے دیکھا ہے ترے حسن کا عالم چپ چاپ

    دور ابلیس کے یہ بادہ گساران مجازؔ

    پیتے رہتے ہیں جہنم کا جہنم چپ چاپ

    مآخذ :
    • کتاب : Urdu Quarterly BADBAAN (Pg. 124)
    • Author : Nasir Bagdadi
    • مطبع : E-2, 8/14, Mayar Square, Block No.14 Gulshane-e-Iqbal (Oct. - Dec. 2002,Issue No 8)
    • اشاعت : Oct. - Dec. 2002,Issue No 8

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY